انسانیت کو درس یہ کربلا کا ہے۔۔۔مہر ساجد شاہ

انسانیت کو درس یہ کربلا کا ہے
ساتھ سچ کا،خوف صرف خدا کا ہے

تکلیف مصیبت امتحاں سمجھنے والو
کربلا تو مظاہرہ عہد و وفا کا ہے

ہر کربلا کا منظر ایک سا ملے گا
چہرے پرُسکون، صبر انتہا کا ہے

سجدہ معراج بندگی ہے خالق ہے سامنے
نادان سمجھتے ہیں، یہ وقت دعا کا ہے

فلسفہ کربلا سے زیست مزین ہو جائے
یہ معاملہ بھی شاد خصوصی عطا کا ہے!

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *