قصوروار کون؟۔۔۔عزیزخان

جہانگیر ٹو کنٹرول (جہانگیر DPO)

کنٹرول ٹو جہانگیر کیری آن سر
کنٹرول خالدصدر کدھر ہے ؟
(خالد SHO)

سر اُن کی سرکاری گاڑی کے دونوں ٹائر پھٹ گئے ہیں وہ پرائیویٹ گاڑی پر چھوٹے سیٹ کے ساتھ گشت پہ ہیں۔۔
کنٹرول: اُسے کہو کہ ابھی جہاں سے مرضی ٹائر لے جو مرضی کرے اگر ایک گھنٹہ میں گاڑی آن روڈ نہ ہوئی تو خود کو معطل سمجھے اور لائن حاضری کرے۔

ایس ایچ او صدر سوچتے ہوئے کہاں سے لاؤں ٹائر کس کو کہوں ؟

چوہدری اللہ داد کو کہتا ہوں
ہیلو چوہدری صاحب SHO صدر بول رہا ہوں
جی SHO صاحب حُکم کریں

جی وہ DPO صاحب ناراض ہو رہے ہیں سرکاری گاڑی کے ٹائر ڈلوا نے ہیں وہ تو ڈالوادیں۔۔

جی تعمیل ہوتی ہے ،آپ بس ڈکیٹی کے مقدمہ میں انور علی جو حوالات میں بیٹھا ہے، کو چھوڑ دیں۔
چوہدری صاحب ہو جائے گا بس آپ ابھی میری نوکری بچائیں اور
میری کار کے ٹائر بھی ختم ہیں وہ بھی بھجوا دیں تو مہربانی ہو گی۔۔
جی بہتر سرکار!

ہیلو ،اوئے قاسم چوہدری اللہ داد بول رہا ہوں،
میری ایس ایچ او سے بات ہوگئی ہے تیرا کام ہو جائے گا دو لاکھ لے کر ابھی  پہنچ۔

ایک گھنٹہ بعد۔۔
خالد صدر ٹو کنٹرول
کیری آن
جہانگیر صاحب کی خدمت میں عرض کریں  حُکم کی تعمیل  ہو گئی ہے سرکاری گاڑی آن روڈ ہے۔

*کرائم میٹنگ DPO*

اوئے SHO اے ڈویژن کھڑے ہو جاو نہ تم سوئے رہتے ہو اس ماہ کی ریکوری کم کیوں ہے تمہاری ؟

سٹینو آرڈر لکھو اور ابھی اس کا ایک پھول اُتار لو تمہیں تو حوالدار بنا کے اپنے گیٹ پرکھڑا کروں گا،
اس کے پہلے بھی شوکاز ہوں گے دیکھو۔۔

SHOاے  ڈویژن:سر میرے چھوٹے چھوٹے بچے ہیں معافی دیں آئندہ ماہ میری کارگزاری اچھی ہوگی ،۔۔

DPO:نہیں تُم ہو ہی بے غیرت آج کوئی معافی نہیں!

SHO:سر جی
نکل جاؤ میری میٹنگ سے

یہ SHO بی ڈویژن کھڑا ہو جائے
(عوام کے لیے جابر خان SHO پیلا چہرہ جیسے قصاب کے سامنے بکرا) جناب ؟

DPO
اوئے کیا شکل نکالی ہوئی ہے تُم نے ریڈ پر جانا تھا کراچی ؟

SHO
سر وہ نفری کے لیے سرکاری گاڑی لے جاوں ؟

DPO
یہاں گشت کون کرے گا اگر کوئی واردات ہو گئی تو ؟

جو مرضی کرو مجھے اشتہاری چاہیے تعمیل حکُم ہو گی جناب

اور SHO سوچتے ہوئے پرائیویٹ گاڑی ملازمین کا کھانا کل خرچہ 20000  مدعی بھی کوئی نہیں کہاں سے لاؤں گا
بیٹھ جاؤ اشتہاری نہ ملا تو تمہیں اُسی تھانےکی حوالات میں بند کروں گا ؟

آئندہ ماہ اسلحہ منشیات اور برآمدگی پوری نہ ہوئی تو پھر دیکھوں گا تُم سب کو، یہ ڈی ایس پی بھی کام نہیں کرتے،
ٹھیک ہے سب جائیں۔۔

*ASP*
صاحب آپ بیٹھے رہیں اردلی اچھی سی کافی لے کر آوؤ،ساتھ سینڈوچ بھی لانا۔۔

باہر آکر تمام ایس ایچ اوز اور ڈی ایس پی ایک دوسرے کی شکل دیکھتے ہوئے (آج صاحب دا موڈ بڑا خراب سی لگدا ے گھر بیگم صاحبہ نال لڑائی ہوئی ہے)
کھسیانی ہنسیاں۔۔

*اکاونٹنٹ* انویسٹی گیشن کے فنڈز پڑے ہیں

جی سر۔۔
پٹرول اور بلڈنگ کے ؟ پڑے ہیں

سر : بل بنا لوں

اور تمام تفتیشی افسران سے انویسٹیگیشن کے بل بھی بناؤ لاوؤ،مجھے رقم “ویلفیر”کے لیے چاہیے.

جی سر وہ۔۔
سر وہ پہلے صاحب بھی مختلف ہیڈز سے “ویلفیر “کےلیے پیسے لے گئے تھے دستخط نہیں کر گئے ،اوے تم نے اکاونٹنٹ رہنا ہے یا کراؤں تمہارا آڈٹ۔۔۔

نہیں سر معافی دیں چھوٹے چھوٹے بچے ہیں حکم کی تعمیل  ہو گی

*تھانہ اے ڈویژن میٹنگ*
میری بات سُن لو تُم سب آج میرے پھول بچ گئے ہیں اگلی میٹنگ میں میری ریکوری نہ ہوئی اسلحہ منشیات کے مقدمات نہ ہوئے تو تم سب کی خیر نہیں جو مرضی کرو سب حرامیوں کو پکڑ لو سب کو چھتر پریڈ کرو پر مجھے اپنی نوکری بچانی ہے

*تھانہ بی ڈویژن میٹنگ*

اوئے مُنشی
جی صاحب
بیس ہزار چاہئیں کراچی جانا ہے ریڈ کے لیے ورنہ DPO نے میری گردن توڑ دینی ہے۔

صاحب کرم علی آیا تھا جوا کروانا چاہتا ہے اگر اجازت دیں تو ؟

کر لو یار پر اُسے پچاس ہزار بولو
صاحب پھر وہ ساتھ شراب بھی بیچے گا کر لے یار ،ابھی میری نوکری بچ جائے بس ریڈ  کرنے  کراچی جانا ہے۔۔

محر ر تھانہ۔۔
تمہارا پرچہ ہو ہی نہیں سکتا مٹھائی لگے گی سائل کتنی دس ہزار سے کم تو صاحب مانتا ہی نہیں جناب چوری بھی میری ہوئی ہے مٹھائی بھی میں دوں۔۔ محر ر غصے سے ،پھر کروا لو پرچہ ؟
چل ابھی کاغذ کاربن پینسل تو لے آؤ، تمہاری بات کرتا ہوں صاحب سے ۔۔

سائل جی اچھا جی

سنتری تھانہ۔۔
ناظم صاحب مُشتبہ لے کے جارہے ہو ساڈی مٹھائی تو دیتے جاؤ،
یہ لو یار۔۔
بس پانچ سو ؟
محمد علی سو روپے اور دے دو سنتری بادشاہ کو،
سنتری :مہربانی ناظم صاحب!

اب آپ خود سوچیں اور اندازہ لگائیں کہ قصوروار کون ہے ؟؟؟

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست ایک تبصرہ برائے تحریر ”قصوروار کون؟۔۔۔عزیزخان

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *