عشق کا دربار۔۔۔رابعہ الرباء

میں عشق کے دربار سے خالی ہاتھ نہیں لوٹی
مانگ میری سندوری ہے،
گجرے پہن کے آئی  ہوں
آنکھ میری کجلائی  ہے،
روپ میرا نورانی ہے
میں عشق کے دربار  سےخالی  ہاتھ نہیں لو ٹی
میں عشق کے دربار سے جھولی بھر کے آئی  ہوں
سکون بھی سارے لائی  ہوں
طلب سے خالی آئی ہوں
اک جادو ہے میرے چاروں اور
اک کیف میں نہائی  ہوں
خوشی کے پھول بھی دیکھے ہیں
تعبیر بھی ان کی حنائی  ہے
ماتھے پہ چاند ٹیکا ہے
خوشبو سے سب کچھ بھیگا ہے

میں عشق کے دربار سے جھولی بھر کے آئی  ہوں
ہاں۔۔
عشق کے دربار سے جھولی بھر کے آئی  ہوں۔۔!

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *