ہم بھی توقیدی ہیں۔۔۔اے وسیم خٹک

ہم بھی قیدی تو ہیں
عرصہ دراز سے
ناکردہ جرموں میں
پابند سلاسل ہیں
گناہوں سے آگاہ نہیں
بس اتنایاد ہے ایک دن
ملکی  بقا  کی خاطر
کچھ اداروں پر
آواز اور انگلی اُٹھائی تھی
جس کے بعد اکثر ہمیں
نامعلوم نمبروں سے فون آئے
بات حد سے بڑھی تو
اپنے معلوم ہی لوگ
نامعلوم افراد کے لبادےمیں
اٹھا کر لے ہمیں آئے
پانی مانگا تو بےحد دیا
نئے نئےطریقوں سےخاطر تواضع کی گئی
سالوں سے ہی قیدی ہیں
نہ کوئی کیس بنتا ہے
نہ جج کے سامنے پیشی ہوتی ہے
ملکی سالمیت پر انچ کی جنہوں نےکوشش کی
ملک تباہ کرنے کی سازش کی
وہ دودن قید ہوا ـ تو شور مچا
جینیوا معاہدے کی یاد آئی
ہمارے لئے بھی کوئی معاہدہ ہو
اہم بھی توقیدی ہیں
ہم بھی توقیدی ہیں

اے ۔وسیم خٹک
اے ۔وسیم خٹک
پشاور کا صحافی، میڈیا ٹیچر

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *