جدائی کی پانچویں سالگرہ پر۔۔۔۔خالد سہیل

وہ میرے دل میں بستی تھی
وہ میرے گھر میں رہتی تھی
وہ میری زندگی میں بھی
مرے ہمراہ چلتی تھی
نجانے اب کہاں ہے وہ
وہ کس کے دل میں بستی ہے
وہ کس کے گھر میں رہتی ہے
مگر جب بھی کوئی بادل
مری چھت سے گزرتا ہے
مرے گھر میں برستا ہے
تو اس کی یاد کی خوشبو
مرے من میں مہکتی ہے
کبھی اس یاد سے دل میں مسلسل ٹیس اٹھتی تھی
مگر اب میرے ہونٹوں پر تبسم پھیل جاتا ہے
مرے دل میں کوئی نادان عاشق مسکراتا ہے۔۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *