شہید کاروان جمہوریت

میں نےلاش اٹھانی چاہی مگر بہت بھاری تھی۔۔
کیسے نہ ہوتی تمغہ جو اتنا بڑا تھا،
بارہ سال کا بچہ اور کاروان جمہوریت کا پہلا شہید۔۔
یہ تو مجھ سے بھی برداشت نہ ہوا میں بھی دل پکڑے بیٹھا ہوں،
خوشی میں دل کی دھڑکن بڑھ جاتی ہے نا۔۔۔
اور ماں کا تو نہ ہی پوچھو ۔۔خوشی سے پاگل ہو چکی۔
یہ بڑے لوگ بھی کیسے کیسے ہم چھوٹے لوگوں پر عنایت کی حد کر دیتے ہیں۔۔
بھلا جن سے اپنا بیٹا نہ سنبھل سکا وہ اتنے بڑے تمغے کیسے سنبھالیں گے۔۔۔۔؟

مظفر عباس نقوی
مظفر عباس نقوی
سیاست ادب مزاح آذادمنش زبان دراز

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *