• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • توہم پرستی کی انتہاء:5 سالہ بچّی کو بھارتی پنچائیت کی انوکھی سزا

توہم پرستی کی انتہاء:5 سالہ بچّی کو بھارتی پنچائیت کی انوکھی سزا

کوٹا: بھارت کے ضلعے بونڈی میں حکام نے 5 سالہ بچی کو توہم پرستی کا شکار بننے سے بچا لیا۔ بچی نے 2 جولائی کو اپنے سکول میں غلطی سےٹٹیری نامی ایک پرندے کے انڈے توڑ دئیے تھے۔

مقامی عقائد کے مطابق اس پرندے کو بارش کا ‘پیغام بر’ سمجھا جاتا ہے۔ بچی نے اس پرندے کے انڈے توڑے تو گاؤں کی پنچائت نے اس بچی کو تین دن تک گھر میں داخل نہ ہونے کی سزا دی۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

پہلی جماعت میں پڑھنے والی اس بچی کو اجازت تھی کہ اپنے گھر کے باہر صحن میں قیام کر سکتی تھی۔ بچی کے باپ نے پنچائت کے حکم کو ماننے سے انکار کر دیا۔ باپ کے انکار پر پنچائت کے پنچوں نے اس سزا کا دورانیہ بڑھا کر 11دن کر دیا۔

یہ معاملہ مقامی حکام کے نوٹس میں آیا تو ہنڈولی کے تحصیل دار بھوانہ سنگھ اور ایس ایچ او لکشمن سنگھ گاؤں میں پہنچ گئے۔

جب وہ پہنچے تو بچی اپنے گھر کے سامنے رکھی چارپائی پر بیٹھی اسکول کی کتابیں پڑھ رہی تھی۔ بچی اپنے گھر نہیں جا سکتی تھی لیکن گھر کا کھانا کھانے کے علاوہ سکول بھی جا سکتی تھی۔

حکام نے گاؤں والوں کو پنچائت میں کیا گیا فیصلہ منسوخ کرنے پر قائل کرنے کی کوشش کی، لیکن گاؤں والوں کا اصرار تھا کہ قدیم معاشرتی روایات کے مطابق گناہ کے کفارے کے لیے سزا کا نفاذ ضروری ہے۔

حکام نے جب گاؤں والوں کو بتایا کہ ان کا یہ عمل قانون کے مطابق نہیں بلکہ اس پر گاؤں کی پنچائت کو سزا ہو سکتی ہے تو پنچائت نے فوراً ہی بچی کی سزا منسوخ کردی۔

Advertisements
julia rana solicitors

ایس ایچ او لکشمن پرشاد کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے مزید تفتیش جاری ہے۔

  • merkit.pk
  • julia rana solicitors london
  • julia rana solicitors
  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply