8 ماہ کے بچے کو ملازمت مل گئی

SHOPPING

ابوظہبی میں جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے ایک 8 ماہ کے بچے کو ملازمت دینے کی رپورٹس سامنے آنے پر اتھارٹی سے وضاحت طلب کرلی گئی۔ خلیج ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیا پر وائرل ایک ویڈیو کے مطابق  جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل نے ایک 8 ماہ کے ننھے شہزادے کو  ہیپی نیس ایگزیکٹو کی نوکری دے دی ، جس کا مقصد شہریوں میں خوشی اور مسرت کے جذبات بانٹنا اور خوشیوں کو عام کرنا ہے۔ سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں دیکھاگیا کہ محمد الہاشمی نامی 8 ماہ کے بچے کو جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کے چیف ہیپی نیس ایگزیکٹو کے طور پر تعینات کیا گیا ، جسے دنیا کا کم عمر ترین ملازم بھی کہا جارہا ہے۔ ویڈیو میں بچے کو واکر میں بیٹھے آفس کے مختلف مقامات پر گھومتے ہوئے اور ڈائریکٹر جنرل سے ہاتھ ملاتے دیکھا جاسکتا ہے جبکہ ایک جگہ اسے ایک منی ڈیسک پر بھی بیٹھے ہوئے دکھایا گیا، جس کے اردگرد کھلونا جہاز اور ربڑ کی بطخیں رکھی ہوئی ہیں۔ بچے کی ویڈیو انٹرنیٹ پر وائرل ہونے کے بعد ابوظہبی کے جوڈیشل ڈپارٹمنٹ کے پبلک پراسیکیوشن آفس نے ایک حکومتی عہدیدار کو طلب کرکے 8 ماہ کے بچے کو ملازمت پر رکھنے کی وضاحت طلب کرلی۔ پراسیکیوشن ڈپارٹمنٹ کی جانب سے کہا گیا کہ بچے کو ملازمت پر رکھنے کی وضاحت کے لئے حکومتی عہدیدار کو طلب کیا گیا ہے۔ مزید کہا گیا کہ یہ طلبی بچوں کے حقوق کی حفاظت کی غرض سے کی گئی ہے۔

SHOPPING

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *