185 سال قبل ہونے والی پلاسٹک سرجری کا انکشاف

یہاں سائنسدانوں اور کتابوں سے دلچسپی رکھنے والے لوگوں کی ایک ٹیم نے انتہائی نادر روزگار قسم کی کتاب کا سراغ لگایا ہے جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ اب سے کم از کم 185 سال قبل بھی پلاسٹک سرجری ہوتی تھی اور اس زمانے کے سرجنوں نے پلاسٹک سرجری کے خاص طریقے ریہنو پلاسٹی سے کئی کامیاب آپریشن کئے تھے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ کتاب سے معلوم ہوتا ہے کہ جوان فیڈرک نامی پلاسٹک سرجری کا یہ طریقہ ری کنسٹریکٹو سرجری کے طور پر   دریافت کیا گیا تھا اور پھر اس میں اپنی مہارت کو انتہا تک پہنچا دیا گیا تھا۔ 1833میں شائع ہونے والی اس کتاب سے یہ بات ثابت ہوگئی ہے کہ پلاسٹک سرجری 21ویں صدی کی دین نہیں ۔ اس سے بہت پہلے یہ کام شروع ہوچکا تھا ، تاہم وقت کے ساتھ پلاسٹک سرجری کے انداز میں یقینی طور پر تبدیلی آتی رہی ہے،  مگر اسکی بنیاد بہت پہلے رکھی جاچکی تھی۔ کتاب میں موجود ڈرائنگ سے یہ بھی معلوم ہوتا ہے کہ اس زمانے کے ایک سرجن نے ناک میں بن جانے والے ٹیومر کو ختم کرنے کیلئے پلاسٹک سرجری کا طریقہ استعمال کیا تھا اور متاثرہ ناک کو درست کر دیا تھا۔ اسی کتاب میں مصنف نے یہ بھی لکھا ہے کہ اگر ناک یا دوسرے اعضا کسی بھی بیماری کے سبب بدہیئت یا خراب ہوجائیں یا ان میں ٹوٹ پھوٹ یا زخم کا سلسلہ شروع ہوجائے تو اسے درست کیا جاسکتا ہے۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *