• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • پروسٹیٹ کینسرکے بارے میں یہ دس باتیں جاننا ضروری ہیں

پروسٹیٹ کینسرکے بارے میں یہ دس باتیں جاننا ضروری ہیں

کینسرکی مختلف اقسام میںپروسٹیٹ کینسرچوتھے نمبرپرآتاہے اورمردوں کوہونے والے کینسرمیں یہ دوسرے نمبرپرہے۔زیادہ تر65 سال سے زائد عمرکے افراد اس مرض کاشکارہوتے ہیں۔ایک اندازے کے مطابق تقریباً ہردس میں سے چھ افراد اس مرض میں مبتلاہوتے ہیں۔ پروسٹیٹ کینسرکے بارے میں معلومات کی فراہمی ضروری ہے۔ ذیل میں پروسٹیٹ کینسرکے بارے میں دس نکات ہیں جن کاجانناہرمرد کے لئے ضروری ہے۔

1۔پروسٹیٹ گلینڈ

نوجوان افراد میں پروسٹیٹ ایک چھوٹے اخروٹ کے سائز کاہوتاہے اورعمرکے ساتھ اس کی جسامت قدرے بڑی ہوتی جاتی ہے۔یہ مردانہ جنسی غدود مثانہ کے بالکل ساتھ نیچے کی جانب اورریکٹم کے سامنے ہوتاہے۔پیشاب کی نالی اس کے اردگرد ہوتی ہے اسی لئے اس کینسرکی وجہ سے پیشاب کانظام متاثرہوتاہے۔اس کے دواہم کام پیشاب کے نظام کومنظم اورمنی پیداکرناہے۔

2۔بریسٹ کینسرسے زیادہ عام ہے

دنیابھرمیں مردوں میں پروسٹیٹ کینسرکاخطرہ عورتوں کوہونے والے بریسٹ کینسرسے زیادہ پایاجاتاہے۔90کے بعد سے چھاتی کے کینسرسے مرنے والی خواتین کی شرح میں کمی آئی ہے جبکہ مردوں میں پروسٹیٹ کینسرسے مرنے والوں کی شرح میں اضافہ ہواہے ۔ماہرین کے مطابق آگے جاکراس میں مزید اضافہ کے امکانات پائے جاتے ہیں۔

3۔ابتداء میں تشخیص بہترہے

ابتدائی مراحل میں عام طورپرپروسٹیٹ کینسرکی کوئی علامت دیکھنے میں نہیں آتی لیکن اگراس مرض کی ابتداء ہی میں تشخیص ہوجائے توکامیاب علاج کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔اگراس کاجلد پتہ چل جائے تو تشخیص کے بعد۵ سال تک مریض کے زندہ رہنے کاسوفیصد امکان ہوتاہے۔لہٰذا اس مرض سے بچاؤ کے لئے ڈاکٹرکے مشورے سے اسکریننگ ٹیسٹ ضرورکروائیں۔

4۔پروسٹیٹ کینسرکے لئے اوسط عمر

بوڑھے لوگوں میں پروسٹیٹ کینسربہت زیادہ عام ہے۔اس کینسرکی تشخیص کی اوسط عمر 66 سال ہے اور 40 سال سے کم عمر کے افراد میں بہت قلیل تعداد اس بیماری میں مبتلا ہیں اسی لئے اسے بوڑھے آدمی کی بیماری کہاجاتاہے۔پروسٹیٹ کینسرکے بیشترکیسز قابل علاج ہوتے ہیں کیونکہ اس کینسرکے دیگراعضاء تک پھیلنے سے پہلے ہی اس کاسراغ لگالیاجاتاہے۔

5۔عام علامات

پروسٹیٹ کینسرکی علامات مختلف ہوتی ہیں لیکن کچھ عام علامات یہ ہیں جیسے ران،کمراورکولہوں میں دردجس کے باعث بیٹھنادشوارہوجاتاہے،پیشاب میں درد اورخون کا آنا،دوران پیشاب شدید دردیامشکل،کمرکے نچلے حصے یا پیٹ میں درد،باربارپیشاب کی حاجت محسوس ہونا اوردیگرمردانہ امراض شامل ہیں۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *