• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • نقیب اللہ قتل کیس:آئی جی سندھ نے سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرادی

نقیب اللہ قتل کیس:آئی جی سندھ نے سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرادی

SHOPPING
SHOPPING

اسلام آباد:آئی جی سندھ پولیس اے ڈی خواجہ نے نقیب اللہ کے قتل میں ہونے والی پیش رفت سے متعلق سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرادی۔

جمعرات کو سپریم کورٹ میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت جاری ہے ،سماعت کے دوران آئی جی سندھ نے نقیب اللہ قتل رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نقیب اللہ محسود کی پروفائل کا جائزہ لیا گیا، بادی النظر میں یہ پولیس مقابلہ جعلی تھا، نقیب اللہ کو پولیس نے 2 دوستوں کے ہمراہ 3 جنوری کو اٹھایا۔

نقیب اللہ کو غیر قانونی حراست میں رکھا گیا اور شدید تشدد کا نشانہ بھی بنایا گیا۔

رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ نقیب کے دوستوں قاسم اور حضرت علی کو 6 جنوری کو چھوڑ دیا گیا جب کہ پولیس افسران نقیب اللہ کو ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کرتے رہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ راؤ انوار جان بوجھ کر کمیٹی میں شامل نہ ہوئے جب کہ انہوں نے جعلی دستاویزات پر ملک سے فرار ہونے کی کوشش کی۔

SHOPPING

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے نوجوان نقیب اللہ قتل کیس میں ملوث سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کی گرفتاری کیلئے آئی جی سندھ کو 72 گھنٹے کی مہلت دی تھی جو ختم ہوگئی لیکن راؤ انوار تاحال قانون کی گرفت سے آزاد ہے۔

SHOPPING

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *