• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • ’ٹیلی کام کمپنیاں کس طرح لاکھوں لوگوں کی نگرانی کررہی ہیں،آپ بھی جانیے

’ٹیلی کام کمپنیاں کس طرح لاکھوں لوگوں کی نگرانی کررہی ہیں،آپ بھی جانیے

پاکستان میں کام کرنے والی ٹیلی کام کمپنیاں، پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) کے حکم پر ایک بڑے پیمانے پر نگرانی کا نظام چلا رہی ہیں جو کسی ریگولیٹری میکانزم یا قانونی طریقہ کار کے بغیر صارفین کے ڈیٹا اور ریکارڈ کی نگرانی کررہی ہیں۔

یہ معلومات ان شہریوں کی نگرانی سے متعلق ایک کیس میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم میں سامنے آئی ہیں جن کی نجی فون پر گفتگو ریکارڈ کی گئی اور بعد ازاں سوشل میڈیا پر جاری کی گئی، 8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات کے دوران، سابق وزیراعظم عمران خان اور ان کی اہلیہ سمیت کئی آڈیو کلپس سوشل میڈیا پر وائرل کی گئی، جس کی وجہ سے یہ معاملہ عدالت لایا گیا۔

Advertisements
julia rana solicitors

جسٹس بابر ستار کے تحریری فیصلے کے مطابق عدالت کو بتایا گیا کہ ٹیلی کام کمپنیوں سے کہا گیا تھا کہ وہ نامزد ایجنسیوں کے استعمال کے لیے ایک مقررہ جگہ (جسے ’نگرانی مرکز‘ کہا جاتا ہے) لافل انٹرسپٹ مینجمنٹ سسٹم (ایل آئی ایم ایس) کو ’خریدنے، امپورٹ اور انسٹال“ کریں، تاہم عدالت کو ان ایجنسیوں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

Facebook Comments

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply