جغرافیہ کے قیدی (26) ۔ مغربی یورپ ۔ شمال اور جنوب/وہاراامباکر

شمالی یورپ میں ممالک جنوب کے مقابلے میں زیادہ امیر ہیں اور ایسا صدیوں سے ہے۔ شمال میں صنعت کاری زیادہ ہے اور معاشی خوشحالی بھی۔ شمال میں تجارتی راستے بنانا اور برقرار رکھنا آسان ہے۔ اس کے مقابلے میں سپین جیسے ملک کو تجارت کے لئے یا تو پائرینی عبور کرنا پڑتا ہے یا پرتگال اور شمالی افریقہ کی محدود منڈی تک محدود رہنا ہوتا ہے۔

Advertisements
julia rana solicitors

جنوبی اور شمالی یورپ میں فرق کی ایک جزوی وجہ یہ بھی ہے کہ جنوب میں ساحل کے ساتھ زرعی میدانوں کی تعداد کم ہے۔ اور انہیں خشک سالی اور قدرتی آفات کا سامنا زیادہ ہوتا ہے۔ جبکہ اس کے مقابلے میں شمالی یورپ میدان فرانس سے لے کر روس میں کوہ یورال تک پھیلا ہے۔ اس میں بڑے پیمانے پر کامیاب زراعت ہو سکتی ہے۔ آبی گزرگاہیں فصلوں اور سامان کی ترسیل بھی آسان کر دیتی ہیں۔
اس میدان میں سب سے زیادہ فائدہ فرانس کو ہے۔ اس میں مغربی یورپ کی زرخیز زمین کا سب سے بڑا حصہ ہے اور اس کے کئی دریا ایک دوسرے سے ملتے ہیں۔ ایک دریا (دریائے سن) مغرب کی جانب جا کر بحراوقیانوس میں گرتا ہے۔ ایک (دریائے رون) جنوب میں جا کر بحیرہ روم میں۔ یہاں بڑی حد تک چپٹی زمین ہے۔ اور ان عوامل کی وجہ سے اس کے علاقوں کا ایک ملک میں متحد ہونا آسان ہے۔ اور نپولین کے وقت سے اس کی طاقت مرکز میں رہی ہے۔
جنوب اور مغرب میں کئی ممالک ہیں جو دوسرے درجہ کی یورپی طاقتیں ہیں۔ اس میں جزوی وجہ ان کی جگہ ہے۔ جنوب میں اٹلی ہے جو کہ ترقی کے لحاظ سے شمال سے بہت پیچھے ہیں۔ اور اگرچہ یہ 1871 سے ایک ملک رہا ہے (وینس اور روم کو ملا کر) لیکن اس ملک کے اپنے شمال اور جنوب میں اختلافات زیادہ ہیں اور بڑھ رہے ہیں۔
سپین بھی جدوجہد کر رہا ہے اور عرصے سے کرتا رہا ہے۔ اس کے ساحلی میدان زرخیز نہیں۔ دریا لمبے نہیں۔ مغربی یورپ سے رابطہ پیرینی پہاڑ مشکل کر دیتے ہیں۔ اور اس کے جنوب میں بحیرہ روم کی دوسری طرف کے ملک غریب ہیں اور اچھے تجارتی پارٹنر نہیں بن سکتے۔ دوسری جنگِ عظیم کے بعد یہاں پر فرانکو کی آمریت تھی اور ملک کی سیاسی ترقی منجمد ہو گئی۔ فرانکو 1975 میں وفات پا گئے۔ سپین 1986 میں یورپی یونین میں شامل ہو گیا۔ 1990 کی دہائی میں اس نے باقی یورپ کے ساتھ آ جانے کا سفر شروع کیا۔ لیکن اس کی جغرافیائی اور اقتصادی کمزوریاں اسے پکڑ لیتی ہیں۔ بجٹ سے زیادہ اخراجات اور معاشی ڈسپلن نہ ہونے کی وجہ سے 2008 کے بحران میں سب سے زیادہ متاثر ہوا تھا۔
(جاری ہے)

Facebook Comments

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply