ہنسی کے یہ فوائد آپ کو یقیناً معلوم نہیں ہوں گے

ماہرین کا کہنا ہے کہ جو لوگ ہنستے اور خوش رہتے ہیں ان کا مدافعتی نظام بیماریوں کے خلاف مضبوط ہوتا ہے اور وہ لمبی عمر پاتے ہیں۔

ہنسی نا صرف بیماریوں سے بچاؤ اور علاج میں مددگار ثابت ہوتی ہے بلکہ اسے سماجی تعلقات کو مضبوط بنانے کے لیے بھی اہم سمجھا جاتا ہے۔

خیال رہے کہ ہر سال مئی کے پہلے اتوار کو ہنسی کے فوائد کے بارے میں شعور اجاگر کرنے کے لیے بین الاقوامی ہنسی کا دن منایا جاتا ہے۔

کہا جاتا ہے کہ ہنسی زندگی کا نمک ہے جس کا مطلب ہے کہ اگر ہنسی نہ ہو تو زندگی بور ہو جاتی ہے۔ اکثر لوگ ہنسی کو خوشی سے جوڑتے ہیں اور کہتے ہیں کہ اگر کوئی خوش ہوتا ہے تو ہنسی قدرتی طور پر آتی ہے۔

لیکن ہنسی کی مختلف شکلیں اور لہجے ہوتے ہیں، جیسے کسی لطیفے پر ہنسنا، مثبت جواب پر ہنسنا، ادب کے تناظر میں ہنسنا، موضوع کو جانے بغیر دوسروں کے ساتھ ہنسنا، دل سے ہنسنا، جعلی ہنسی، کسی بات پر اچانک ہنسنا، کڑوی ہنسی، بیکار ہنسی وغیرہ۔

ماہرین کے مطابق دل سے نکلنے والی حقیقی ہنسی صحت کے لیے فائدہ مند ہے اور بہت سی بیماریوں کو روکنے اور کم کرنے میں مدد دیتی ہے۔

ڈاکٹروں کے مطابق ہنستے وقت انسانی جسم میں اینڈورفن نامی ہارمون خارج ہوتا ہے جو ذہنی دباؤ کو دور کرنے میں براہ راست کردار ادا کرتا ہے۔

وہ اس ہارمون کو قدرتی درد دور کرنے والا کہتے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر آپ ہنسنا نہیں روک سکتے اور ہنسنا چاہتے ہیں تو کوئی مضحکہ خیز فلم یا ٹی وی شو دیکھیں، دوستوں کے ساتھ وقت گزاریں، بچوں کے ساتھ کھیلیں یا کوئی اور سرگرمی جو آپ کو مسکرانے کا باعث بنے۔

رشتوں کو مضبوط کرنا، دوسروں کو راغب کرنا اور تنازعات کو کم کرنے میں مدد کرنا ہنسی کے بہت سے سماجی فوائد میں سے کچھ ہیں۔

مسکراتے چہرے، خوبصورت اور مثبت لوگ سماجی طور پر لوگوں میں قابل قبول ہوتے ہیں۔

ہنسی انسان کی فطری ضرورت سمجھی جاتی ہے، انسان کی پیدائش کے ساتھ ہی غم اور خوشی دونوں نے جنم لیا لیکن زندگی کے ابتدائی دور میں انسان کا ہنسی سے رشتہ مضبوط ہوتا ہے۔

پہلی بار 11 جنوری 1998 ء کو بین الاقوامی ہنسی کا دن بڑے پیمانے پر منایا گیا، تب سے یہ دن منایا جاتا ہے، لیکن 11 جنوری کو نہیں، کیونکہ یورپ، امریکا اور کینیڈا میں جنوری میں سخت سردی ہوتی ہے، اسی لیے بین الاقوامی ہنسی کا دن مئی کے پہلے اتوار کو منایا گیا۔

اس کا مقصد لوگوں میں ہنسی کے فوائد کے بارے میں آگاہی بڑھانا ہے۔انسان کی زندگی میں بڑی گہرائیاں ہوتی ہیں لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ چھوٹی چھوٹی باتوں سے پریشان نہیں ہونا چاہیے۔

جو لوگ اکٹھے ہنستے ہیں ، وہ ساتھ رہتے ہیں، اس میں کوئی شک نہیں کہ ہنسی گھر والوں کو ساتھ رکھتی ہے، جو لوگ مل کر ہنستے ہیں وہ ایک دوسرے سے نہیں لڑتے۔

تحقیق سے پتا چلا ہے کہ ہنسی ایک طاقتور دوا ہے جو کبھی پرانی نہیں ہوتی اور آپ جہاں اور جب چاہیں آپ کے ساتھ رہتی ہیں۔

Advertisements
julia rana solicitors

ہنسی انسان کے دفاعی نظام کو مضبوط بناتی ہے، اسے صحت مند رکھتی ہے، درد کو دور کرتی ہے اور اسے ڈپریشن کے منفی اثرات سے دور رکھتی ہے۔ تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ جو لوگ مسکراتے ہیں اور خوش رہتے ہیں وہ لمبی عمر پاتے ہیں۔

Facebook Comments

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply