دیہی پنچایت (سو لفظوں کی کہانی)

نوٹ: اس کہانی کا سرپم کورٹ میں زیر بحث کرپشن کی بے مثال داستان پانامہ پیپرز سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔
چوہدری غلام شریف مرحوم کا بیٹا گاما شریف چوری کرتے رنگے ہاتھوں پکڑا گیا ۔
گاؤں کے سرپنچ کی سربراہی میں پنچایت ہوئی ۔
دونوں طرف کے موقف سنے گئے ۔
دلائل اور گواہوں کے بیانات سے واضح ہوگیا کہ گاما شریف چور ہے ۔
سرپنچ فیصلہ سنتے ہوا بولا!
لوگو ! گاما شریف کو سزا نہیں ہوسکتی ۔ اگر تم چاہتے ہو تو درمیان کا کوئی راستہ نکل لیتے ہیں ۔
گاؤں والے حیران ہوئے اور وجہ دریافت کی ۔
سرپنچ بولا!
جس کے نام کے ساتھ ٍٍٍٍٍٍٍٍشریف لگتا ہے بھلاوہ کیسے چوری کرسکتا ہے ۔

ثقلین مشتاق کونٹا
ثقلین مشتاق کونٹا
آپ نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی (نسٹ) اسلام آباد میں کیمیکل انجنیئرنگ کے طالبعلم ہیں۔صحافت سے جنون کی حد تک لگاؤ رکھتے ہیں ۔ پاکستان کو ایسی ریاست بنانے کے خوہاں ہیں جہاں اللہ کے بعد عوام کی حکمرانی ہو نہ کہ جمہوری آمروں کی آمریت قائم ہو ۔ ان کا ماننا ہے کہ اگر صحافی برداری عوام میں شعور بیدار کرنا کا بیڑہ اُٹھا لیں تو یہ مشکل کام جلد ممکن ہوسکے گا۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *