سعودی حکومت کی رمضان المبارک میں بڑی پابندی

سعودی عرب نے رمضان کے دوران مساجد میں عطیات جمع کرنے پر پابندی عائد کردی ۔

تفصیلات کےمطابق سعودی وزیر اسلامی امور و دعوت و رہنمائی نے کہا ہے کہ رمضان المبارک کے دوران مساجد میں عطیات جمع کرنے پر پابندی ہو گی، نماز کے مناظر نشر کرنے کے لیے کیمروں کے استعمال پر پابندی عائد کی ہے۔

تحریری ہدایت میں کہا گیا کہ مساجد کے آئمہ اورموذن ڈیوٹی کی مکمل پابندی کریں۔ انتہائی ضرورت کے علاوہ کسی حالت میں رمضان کے دوران ڈیوٹی سے غیرحاضر نہ ہوں۔ غیر حاضری کی صورت میں امامت اور اذان کے لیے متبادل انتظام کریں۔ وزارت کی انتظامیہ سے اس کی منظوری بھی لیں۔ ہدایت کی گئی ہے کہ اذان ام القری کیلنڈر میں مقررہ وقت پر دی جائے۔ عشا کی اذان رمضان میں مقررہ وقت پر دی جائے۔

اذان کے بعد تکبیر کے دورانیہ کی پابندی کی جائے۔سعودی وزیر اسلامی امور نے یہ بھی ہدایت کی کہ اعتکاف کے لیے اجازت نامے امام مسجد جاری کریں گے اور وہی اس بات کے ذمہ دار ہوں گے کہ اعتکاف کرنے والے کوئی خلاف قانون کام نہ کریں۔اعتکاف کرنے والوں کی نجی معلومات کا اندراج امام کی ذمہ داری ہو گی۔ اعتکاف کے خواہش مند غیرملکی سے کفیل کی منظوری کا خط بھی طلب کیا جائے گا۔

Advertisements
julia rana solicitors london

بیان میں مزید کہا گیا کہ افطار کرانے سمیت کسی بھی عنوان سے عطیات نہ جمع کیے جائیں۔ افطار دستر خوان کے سلسلے میں مقررہ ضوابط کی پابندی کریں۔ افطار دسترخوان کے لیے خیمے لگانے یا عارضی کمرے قائم کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

Facebook Comments

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply