• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • برطانوی نرسوں کی ہفتے میں دوسری بڑی ہڑتال، حکومت کا مطالبات ماننے سے انکار

برطانوی نرسوں کی ہفتے میں دوسری بڑی ہڑتال، حکومت کا مطالبات ماننے سے انکار

برطانوی نرسوں نے ایک ہفتے میں دوسری بار تنخواہوں میں اضافے کے لیے احتجاجی ہڑتال کی ہے، جس کی وجہ سے اسپتالوں میں آپریشن منسوخ ہو گئے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق برطانیہ میں تنخواہوں میں اضافے کے لیے نرسنگ اسٹاف کی دوسری ہڑتال سے اسپتالوں میں آپریشن منسوخ ہو گئے، رائل کالج آف نرسنگ کے ایک لاکھ سے زائد اراکین تنخواہوں میں اضافے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

تاہم برطانوی حکومت نے تنخواہوں میں 5 فی صد اضافے کا مطالبہ مسترد کر دیا ہے، ادھر نرسوں کا کہنا ہے کہ ’’ہم زیادہ کام کرتے ہیں اور کم معاوضہ وصول کر رہے ہیں، ہمیں مزید پیسوں اور مزید عملے کی ضرورت ہے۔‘‘

انگلینڈ، ویلز اور شمالی آئرلینڈ میں رائل کالج آف نرسنگ کے ایک لاکھ ممبران نے ٹریڈ یونین کی 106 سالہ تاریخ میں پہلی بار گزشتہ جمعرات کو واک آؤٹ کرنے کے بعد، منگل کو تازہ ترین ایک روزہ کام چھوڑ ہڑتال کا انعقاد کیا۔

نرسوں کا کہنا ہے کہ مہنگائی کی وجہ سے روز مزہ کے اخراجات پورا کرنا مشکل ہو گئے ہیں، نرسز یونین کے مطابق این ایچ ایس میں نرسنگ کے عہدے کے لیے 47 ہزار اسامیاں خالی ہیں، عملے کی کمی کی وجہ سے مریضوں کی مناسب دیکھ بھال ممکن نہیں۔

ادھر سربراہ رائل کالج آف نرسنگ کا کہنا ہے کہ تنازعہ حل نہ ہونے کی صورت میں اگلے ماہ طویل ہڑتال ہو سکتی ہے۔

Advertisements
julia rana solicitors london

واضح رہے کہ ہڑتال کرنے والی نرسیں برطانیہ کے پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر کے اُن بے شمار کارکنوں میں سے بس کچھ ہی ہیں، جو تنخواہ اور کام کے حالات پر احتجاج اور ہرتال کرنے پر مجبور ہیں، کیوں کہ انھیں کئی دہائیوں سے جاری مہنگائی کی وجہ سے اخراجات پورے نہ ہونے کے بحران کا سامنا ہے۔

  • julia rana solicitors
  • julia rana solicitors london
  • merkit.pk

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply