• صفحہ اول
  • /
  • نگارشات
  • /
  • نااہلی کیس پر اثرانداز ہونے کی کوشش ؟۔۔رضوان عبدالرحمٰن عبداللہ

نااہلی کیس پر اثرانداز ہونے کی کوشش ؟۔۔رضوان عبدالرحمٰن عبداللہ

مولانا طارق جمیل صاحب جس طرح سیاستدانوں میں عمران خان کو ایک بہتر ین سیاستدان گردانتے ہیں، اسی طرح مجھ جیسے بے شمار گہنگار “مولاناؤں “میں ایک اچھے مولانا کی تلاش مولانا طارق جمیل صاحب کے نام پر ختم کر دیتے ہیں ۔ مولانا صاحب تو کئی بار اعتراف کرچکے ہیں کہ وہ عمران خان کے ریاست مدینہ کے نام پر بیچے گئے سیاسی چورن پر ان کے ” لٹو” ہوئے ہیں ۔ لیکن میری وجہ انتخاب قطعاً مولانا صاحب کا “لٹو” ہو نا نہیں ہے ۔

وجہ جاننے میں دلچسپی رکھتے ہوں تو وہ یہ ہے کہ جہاں کئی” مولانے” اپنے تقویٰ و پارسائی کے زعم میں آکر ہماری کسی معمولی بھول چوک کو بنیاد بنا کر جہنم کی ایڈوانس ٹکٹیں کاٹنے میں مصروف ہیں ، تو وہیں مولانا طارق جمیل صاحب بالکل برعکس ہیں ۔ مولانا صاحب کے مطابق تو زمین سے آسمان تک کے کیے گئے گناہوں کے باوجود جنت کی ٹکٹ کی قیمت فقط بارگاہ الہیٰ میں پشیمانی ہے ، اور اس کے ساتھ ساتھ ستر حوروں کا بونس بھی ہے ۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

اوریہ وجہ یقیناً اتنی بڑی ہے کہ مجھ اور مجھ جیسے بےشمار لوگوں کو مولانا طارق جمیل صاحب نے اپنا گرویدہ بنا لیا !گرویدہ کرنے کی دوسری وجہ یہ بھی ہےکہ ہم گہنگاروں کو حوروں کے لالچ میں قبل از وقت ہی منزل آخرت کی طرف اُکساتے مولانا طارق جمیل صاحب، حوروں کی بھی  بھی ایکسٹرا لارج پیک میں مہیا ہونے کے یقین دہانی کرواتے ہیں ۔ مثلاً ان کے نزدیک حورں کا قد 70 میٹر لمبا ہوگا ،ہر مرد کے حصّے میں 70 حوریں آئیں گی ، وغیرہ وغیرہ

اور شاید 70 فٹ والی حوروں کی فینٹسی ہی تھی ، کہ ہم سب مولانا صاحب کے ماضی کی  کچھ مشکوک حرکات و سکنات کو نظر انداز کرتے ہوئے ،ان کو غیر سیاسی اور غیر متنازع سمجھتے رہے ۔ لیکن جانے 3 دن پہلے کیا ہوا کہ مولانا طارق جمیل صاحب جو جنت کی ٹکٹیں بانٹنے میں کوئی ثانی نہیں رکھتے تھے ، انہوں نے اپنی پسند نا پسند کی بنیاد پر کچھ لوگوں کے لئے جنت اور جہنم کا پیمانہ مقرر کر دیا ۔

پہلے مولانا طارق جمیل صاحب نے سندھ ہاؤس میں ہونے والے واقعہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہاکہ انسانوں کو خرید کر حکومت بنائی گئی، کیا یہ اللہ اور اللہ کے نبی (ص) کے سامنے کھڑے ہو سکتےہیں ؟ پھر انہوں نے ایک فتویٰ دیا ،ان کے فتوے  کے مطابق ملک کا بادشاہ ، سارے وزیر اور ججز اپنے فیصلوں کی بنیاد پر جنت یا جہنم جائیں گے ۔ چلیں موجودہ حالات کے تناظر میں ملک کے بادشاہ یعنی شہباز شریف ( یا آرمی چیف ) اور وزیروں کو پی ٹی آئی کے لئے نرم گوشہ رکھنے والے مولانا طارق جمیل صاحب جہنم میں نہیں بھیجیں گے تو اور کون بھیجے  گا ؟تعجب اس بات پر ہوا کہ انہوں نے ججز کو پروانہ جہنم کیوں تھما دیا ؟ خصوصاََ سپریم کورٹ کے وزیراعلی ٰ پنجاب کے فیصلے کے بعد ؟

اس کی وضاحت بھی انہوں نے “اگر “کی شرط کے ساتھ کی ہے ۔۔ یہاں پر مولانا طارق جمیل صاحب کے بیان کو ہو بہو کوٹ کیا جا رہا ہے ۔۔۔ کہ “اگر” ان کے فیصلے صحیح نہ ہوئے تو یہ بدبخت جہنم میں چلے جائیں گے۔” اگر” وہ سوالوں کے جواب صحیح دے سکے تو پھر ان کو جنت میں ڈالا جائے گا۔ بلاشبہ ا نہوں نے یہ نہیں بتایا کہ کونسے فیصلے صحیح نہیں کیے تو یہ بدبخت جہنم میں جائیں تو کن صحیح فیصلوں کی بنیاد پر ان کو جنت میں ڈالا جائے گا ۔

Advertisements
julia rana solicitors london

یقیناً مولانا طارق جمیل صاحب عمران خان کے لئے نرم گوشہ رکھتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب کے سپریم کورٹ کے فیصلے کو درست سمجھتے ہوں گے ؟ اس مفروضے پر تو فیصلہ کرنے والوں کو جنت میں ڈالا جائے گا ؟ دوسری طرف یقیناً سپریم کورٹ میں دائر عمران خان نااہلی ریفرنس  کیس کا فیصلہ بھی ججز کی عاقبت کا فیصلہ کرے گا۔ یقیناً فیصلے سنانے والے اتنے ” ضعیف الاعتقاد “نہیں ہوں گے کہ انہیں مولانا طارق جمیل صاحب سے جہنم کی ٹکٹ لینا پڑ جائے ؟

  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com
  • merkit.pk
  • julia rana solicitors london
  • julia rana solicitors

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply