• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • پاکستان روس مخالف مغربی پابندیوں کے نتائج کی زد میں ہے

پاکستان روس مخالف مغربی پابندیوں کے نتائج کی زد میں ہے

یوکرین کی جنگ کے بعد سے، امریکہ کی قیادت میں مغرب نے روس پر توانائی کے شعبے سمیت یکطرفہ پابندیاں عائد کر دی ہیں۔ ایک ایسا اقدام جس نے تیل کے بحران میں پاکستان کو بھی منفی طور پر متاثر کیا ہے اور اگر ماسکو کے ساتھ توانائی پر بات چیت کی کوئی کوشش کی گئی تو مغربی پابندیوں کو خطرے میں ڈال سکتا ہے۔

پاکستانی میڈیا نے رپورٹ کیا کہ ملک تیل کے بحران سے منفی طور پر متاثر ہوا ہے اور دیگر ترقی پذیر ممالک کی طرح اسے بھی دھمکی دی گئی تھی کہ اگر اس نے روس سے توانائی درآمد کرنے کی کوشش کی تو اسے مغربی پابندیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

پاکستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بھی گزشتہ روز ہفتہ وار نیوز کانفرنس میں اعتراف کیا کہ روس کی پابندیوں کی وجہ سے اسلام آباد کو معاشی مشکلات کا سامنا ہے۔

عاصم افتخار نے کہا، “پابندیوں کے بارے میں پاکستان کا اصولی موقف ہے اور ہم پابندیوں کے لیے ایک عالمی طریقہ کار استعمال کرنا چاہتے ہیں، جس کا مطلب ہے کہ اس عمل کو اقوام متحدہ کے زیر انتظام ہونا چاہیے۔”

پاکستانی اخبار ایکسپریس ٹریبیون نے لکھا: ’’مغربی پابندیوں نے اسلام آباد کو ایران سے پاکستان تک گیس پائپ لائن منصوبے کو آگے بڑھانے سے بھی روک دیا ہے اور اب پاکستان کی جانب سے روس کے ساتھ توانائی کے شعبے میں تجارت کی کسی بھی کوشش سے اسلام آباد پر مغربی پابندیوں کا خطرہ ہو گا۔‘‘

IRNA کے مطابق، ایران-پاکستان گیس پائپ لائن منصوبہ، جسے آئی پی پروجیکٹ کے نام سے جانا جاتا ہے، تین دہائیوں سے زیادہ پرانا ہے۔ اس منصوبے پر اصل میں ایران-پاکستان-انڈیا پیس پائپ لائن کے طور پر اتفاق کیا گیا تھا اور بعد میں بھارت کے معاہدے سے دستبردار ہونے کے بعد اس کا نام بدل کر ایران-پاکستان (آئی پی) گیس پائپ لائن رکھ دیا گیا تھا۔ ضروری معاہدوں اور معاہدوں کو مکمل کرنے کے بعد اور یہاں تک کہ دونوں فریقوں میں سے ہر ایک کی طرف سے ہر منصوبے کے نفاذ میں تاخیر کے معاہدے میں ہونے والے نقصانات کا تعین کرنے کے بعد، 2014 کے آخر کو اس منصوبے پر عمل درآمد کی آخری تاریخ مقرر کی گئی تھی۔ تقریباً 2 بلین ڈالر کی لاگت سے، ایران نے مقررہ تاریخ سے کئی ماہ قبل اپنا وعدہ پورا کیا اور جنوب مغرب میں اپنے گیس کے وسائل سے جنوب مشرقی ایران میں پاکستانی سرحد کے قریب پائپ لائن تعمیر کی۔ لیکن پاکستان نے ہمیشہ پابندیوں کے بہانے ایران کے ساتھ گیس معاہدے کے تحت اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے سے انکار کیا اور اس بار مغربی روس مخالف پابندیوں کا بہانہ جوڑ کر اس سلسلے میں کوئی عملی اقدام نہیں کیا۔ اسلامی جمہوریہ ایران نے اب تک اچھی ہمسائیگی اور ہمسائیگی کی بنیاد پر پاکستان کے ساتھ گیس کے معاہدے میں بیان کردہ جرمانے اور نقصانات وصول کرنے سے گریز کیا ہے۔

روسی پابندیوں پر برکس سربراہی اجلاس میں چینی صدر کے ریمارکس کے بارے میں پوچھے جانے پر پاکستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ یوکرین جنگ کے جواب میں روس کے خلاف مغربی پابندیوں کی وجہ سے پاکستان کے معاشی چیلنجز میں اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا: “پاکستان نے شروع سے ہی یوکرین کی صورتحال پر اپنا موقف واضح کیا ہے اور رہے گا۔” موجودہ صورتحال سنگین ہے اور اس کے بہت سے نتائج ہیں جن کے عالمی برادری خصوصاً ترقی پذیر ممالک جیسے کہ پاکستان اور دیگر ممالک کے لیے سنگین مضمرات ہیں جو اس صورتحال کے نتائج کا سامنا کر رہے ہیں۔

اسلام آباد میں قائم سرکاری ڈپلومیسی سینٹر کے ترجمان نے زور دے کر کہا کہ یوکرین کی پاکستان پر جنگ کے نتائج ان پابندیوں سے مزید سنگین ہوں گے۔

روس یوکرین جنگ کے تناظر میں اسلام آباد کے غیر جانبدارانہ موقف پر امریکا اور مغربی غصے کے باوجود پاکستان نے روس سے 20 لاکھ ٹن گندم خریدنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستانی وزیر اعظم شہباز شریف کی حکومت نے روس سے گندم خریدنے پر اصرار کیا ہے جب کہ پاکستان کے وزیر خزانہ اس سے قبل روس سے سستا تیل درآمد کرنے کی خواہش کا اظہار کر چکے ہیں لیکن اس شرط پر کہ وہ امریکی پابندیوں کا خطرہ نہ کرے۔

اس وقت کے وزیر اعظم پاکستان کا دورہ روس، امریکہ کی واضح مخالفت کے باوجود اقوام متحدہ سمیت عالمی فورمز پر روس مخالف اجلاسوں میں پاکستان کی مسلسل عدم شرکت اور دوطرفہ دفاعی اور فوجی تعاون میں نمایاں اضافہ اس کی مثالیں ہیں۔

Advertisements
julia rana solicitors

ماسکو کے ساتھ اسلام آباد کی مصروفیات نے ہمیشہ امریکہ اور اس کے یورپی اتحادیوں کو ناراض کیا ہے۔

  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com
  • julia rana solicitors
  • merkit.pk
  • julia rana solicitors london

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply