مرچ۔۔مرزا یٰسین بیگ

مرچ واحد نباتات ہے جو زمین کے علاوہ تن بدن میں بھی لگتی ہے۔ دنیا بھر کی دیگر سبزیوں کو ادھر سے ادھر ملاجلا کر اس کا ذائقہ تبدیل کرلیا جاتا ہے مگر مرچ کے ساتھ کچھ بھی کرلو ویسی کی ویسی رہتی ہے، تیکھی و تیز۔ یہ اس کے کردار کی عظمت کی نشانی ہے۔

مرچ کی انسانوں کی طرح بیسیوں قسمیں ہیں، جن میں شملہ مرچ سب سے زیادہ مقبول ہے۔ شملہ رنگت اور ذائقے میں ہر ایک کو بھاتی ہے حالانکہ بےحد موٹی اور ہر زاویے سے پھولی پھولی ہوتی ہے۔ اس کے باوجود کوئی شملہ پر پھبتی کستا ہے نہ ڈائٹنگ کا مشورہ دیتا ہے۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

مرچ جتنی ناٹی ہو اتنی ہی تیز ہوتی ہے۔ ہانڈی یا زبان پر ذرا سی پڑجاۓ تو بڑے سے بڑا پہلوان بھی تلملا اٹھتا ہے۔ مرچ کو کوٹ لو، پیس ڈالو، ریزہ ریزہ کردو مگر وہ اپنی خصلت سے باز نہیں آتی۔ دنیا میں کچھ لوگ مرچ کم کھاتے ہیں، کچھ زیادہ مگر کسی نہ کسی شکل میں کھاتے ضرور ہیں۔ یہ نمکین پکوان اور عورت و مرد کی زبان کا جز ہوتی ہے۔

Advertisements
julia rana solicitors london

مرچی لگانا شیف اور شرارتی افراد کی عادت ہوتی ہے۔ ہر طرح کے گوشت میں مرچی لگاکر چھوڑ دینا ان کا خاصہ ہوتا ہے۔ جسے مرچی لگے وہ بہت بولتا ہے چاہے طوطا ہو، رشتےدار، پڑوسی یا دوست و دشمن۔ مجھے ہری مرچ کھانا پسند ہے۔ ہری مرچ کھانے سے ہری ہری سوجھتی ہے۔ یہ فکاہیہ بھی میں نے ہری مرچ کھاکر لکھا ہے۔ اسے پڑھ کر امید ہے کسی کو بھی مرچی نہیں لگےگی۔

  • julia rana solicitors london
  • julia rana solicitors
  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com
  • merkit.pk

مکالمہ
مباحثوں، الزامات و دشنام، نفرت اور دوری کے اس ماحول میں ضرورت ہے کہ ہم ایک دوسرے سے بات کریں، ایک دوسرے کی سنیں، سمجھنے کی کوشش کریں، اختلاف کریں مگر احترام سے۔ بس اسی خواہش کا نام ”مکالمہ“ ہے۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply