• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • سمندری طوفان دنیا بھر میں تباہی مچا سکتے ہیں، ماہرین

سمندری طوفان دنیا بھر میں تباہی مچا سکتے ہیں، ماہرین

ماحولیاتی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ موجودہ صدی میں سمندری طوفانوں کی شدت میں اضافہ ہو گا جو دنیا بھر میں بڑی تباہی پھیلائیں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق ماحولیاتی ماہرین کی رپورٹ کے مطابق وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ سمندری طوفانوں کی سالانہ تعداد اور شدت میں بتدریج اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ماضی میں زیادہ تر سمندری طوفان خطِ استوا اور اس کے نزدیک سمندری علاقوں میں آتے رہے ہیں لیکن اب یہ آہستہ آہستہ شمال اور جنوب کی سمت میں بڑھنے لگے ہیں۔

ساحل سے ٹکرانے کے بعد یہ طوفان خشکی پر سینکڑوں کلومیٹر فاصلہ طے کر کے آگے بڑھتے چلے جاتے ہیں جبکہ ماضی میں وہ خشکی پر بہت کم اتنا آگے تک بڑھ پاتے تھے۔

رپورٹ میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ مستقبل کے سمندری طوفان شمال کی سمت میں بھی زیادہ بنیں گے جن سے نیویارک، بوسٹن، بیجنگ اور ٹوکیو سمیت ان شہروں کو بھی خطرہ لاحق ہو گا جہاں فی الحال سمندری طوفان بہت کم آتے ہیں۔

خطِ استوا کے علاوہ سمندری طوفانوں کا شمالاً جنوباً بڑھنا اس بات کا ثبوت ہے کہ شدید گرمی اب صرف خطِ استوا یا اس کے قریبی علاقوں تک محدود نہیں رہی ہے بلکہ ان مقامات تک بھی پہنچ رہی ہے جو خطِ استوا سے دور واقع ہیں اور ’’ٹھنڈے علاقے‘‘ تصور کیے جاتے ہیں۔

Advertisements
julia rana solicitors

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ ان طوفانوں کی ابتدا ہو چکی ہے۔ پرتگال کی سرزمین پر تباہی پھیلانے والا سمندری طوفان ’الفا‘ اور امریکی ریاست کنکٹی کٹ تک پہنچنے والا ’ہنری‘ سمندری طوفان دونوں ہی خطِ استوا سے بہت دور ہیں۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ماہرین جس ممکنہ تباہی کا خدشہ ظاہر کر رہے ہیں اس کی ابتدا ہوچکی ہے۔

  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com
  • julia rana solicitors
  • julia rana solicitors london
  • merkit.pk

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply