• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • رواں صدی کے اختتام تک 1500زبانوں کی ناپیدگی کا خدشہ ہے

رواں صدی کے اختتام تک 1500زبانوں کی ناپیدگی کا خدشہ ہے

آسٹریلوی محققین نے ایک تازہ رپورٹ میں کہا ہے کہ رواں صدی کے اختتام تک دنیا سے1500زبانیں ناپید ہو جائیں گی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر موجودہ صورتحال جاری رہی اور اس میں کوئی مداخلت نہ کی گئی تو آئندہ چالیس سال میں زبانوں کو ہونے والا نقصان تین گنا زیادہ ہو جائے گا۔ جس کے نتیجے میں ماہانہ کی بنیاد پر ایک زبان ختم ہو سکتی ہے۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

دنیا بھر میں اس وقت7 ہزار تسلیم شدہ زبانیں بولی جاتی ہیں، جس میں سے کئی ایسی ہیں جو جلد ہی ہمیشہ ہمیشہ کے لیے ناپید ہو جائیں گی۔

ماہرین نےان خدشات کا اظہار کرتے ہوئے بچوں کا نصاب بائی لینگول یعنی دو زبانوں پر مشتمل ہونے کا مشورہ دیا ہے ان کا کہنا ہے کہ علاقائی طور پر مضبوط زبانوں کے ساتھ ساتھ قدیم زبانوں کو بھی فروغ دینے کی ضرورت ہے۔

ماہرین نے بتایا ہے کہ اس تحقیق کے لیے تعلیم، پالیسی، سماجی اور اقتصادی پہلووں سمیت مجموعی حالات کو مد نظر رکھا گیا ہے۔

رپورٹ کے شریک مصنف کا کہنا ہے کہ کسی علاقے کی زبان کی بقا کے لیے سڑکوں کا ڈھانچا تک اہم ہے۔ ہم نے دیکھا کی سڑکیں جتنی عمدہ ہوں گی یعنی کوئی علاقہ جتنا بہتر طور پر دوسرے علاقوں سے جڑا ہوگا اتنا ہی اس علاقے کی مقامی یا قدیمی زبان کی بقا کو خطرہ ہوگا۔ لگتاہے سڑکیں مقامی زبانوں کی کچلنے کے لیے غالب زبانوں کو مدد فراہم کرتی ہیں۔

Advertisements
julia rana solicitors

رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا میں مقامی اور قدیمی زبانوں کے خاتمے کی شرح دنیا میں بلند ترین ہیں۔ اس براعظم پر 250 زبانیں بولی جاتی تھیں، جو اب صرف 40 رہ گئیں ہیں۔

  • merkit.pk
  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com
  • julia rana solicitors
  • julia rana solicitors london

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply