چین :کورونا کے خوف سے 1 کروڑ لوگ گھروں میں بند

چین نے کورونا وائرس کیسز میں اضافے کے بعد شمالی شہر ژیان میں شہر اور کام کی جگہوں پر 13 ملین لوگوں پر سخت لاک ڈاؤن لگانے کا اعلان کیا ہے۔

اسٹیٹ میڈیا کا کہنا ہے کہ مقامی انتظامیہ کی جانب سے حکم نامہ جاری کیا گیا ہے کہ ضروری کام اور ایمرجنسی صورتحال کے علاوہ شہریوں کو گھروں سے نکلنے ی اجازت نہیں ہے۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

آرڈر کے مطابق ہر فیملی سے صرف ایک ہی آدمی کو دو روز بعد گھر سے نکل کر گراسری کرنے کی اجازت ہو گی۔ انتظامیہ کی جانب سے پابندیاں اٹھانے کی کسی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا۔

ژیان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مقامی طور پر منتقل ہونے والے 63 کیسز رپورٹ ہوئے، جس سے گزشتہ ہفتے کے دوران کورونا کی کل تعداد کم از کم 211 کیسز تک پہنچ چکی ہے۔

میڈیا کے مطابق ابھی تک اس بعد کی تصدیق نہیں ہوسکی کہ آنے والے کیسز کورونا کی نئی قسم اومی کرون کے ہیں یا ڈیلٹا وائرس ایک بار پھر تیزی سے پھیل رہا ہے۔

یاد رہے چین میں ابھی تک صرف سات اومی کرون کے کیس رپورٹ ہوئے ہیں، جن میں سے چار گوانگژو کے جنوبی مینوفیکچرنگ سینٹر میں، دو جنوبی شہر چانگشا میں اور ایک تیانجین کی شمالی بندرگاہ میں رپورٹ ہوا ہے۔

ان اقدامات کو 4 فروری سے شروع ہونے والے بیجنگ اولمپک کھیلوں کے آغاز سے پہلے زیادہ بڑھایا جا رہا ہے۔

2019 میں کورونا وائرس کے آغاز سے اب تک ژیان کوسخت ترین پابندیوں کا سامنا ہے، اس سے پہلے 2020 میں چین نے وسطی شہر ووہان میں 11 ملین سے زائد لوگوں پر لاک ڈاون کا نفاز کیا تھا۔

Advertisements
julia rana solicitors

چین میں اب تک کورونا وائرس کے کل ایک لاکھ سے زائد کیس رپورٹ ہوئے جن میں سے 46 سو افراد جان کی بازی ہار گئے۔

  • julia rana solicitors
  • merkit.pk
  • julia rana solicitors london
  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply