بن مانس(ایک فینٹسی)۔۔ڈاکٹر ستیہ پال آنند

سوال لکھا ایک فیس بک عزیز نے “اگر کوئی ناگہانی آفت دنیا کی سب آبادی کو ہلاک کر دے اور ہزاروں برسوں تک برباد رہنے کے بعد دنیا میں ایک نئی  اُپج کا ظہور ہو  ،اور چوپائیوں سے ترقی کر تے کرتے حیوان ناطق، یعنی انسان کا ظہور ہو، تو کیا وہ بھی ہماری طرح ہی ہو گا اور بن مانس کی شکل میں انسان بننے کی راہ پر گامزن ہو گا؟ اس نظم کی بنیاد اسی خیال پر رکھی گئی ہے۔ (س۔پ۔آ)

بن مانس
(ایک فینٹسی)
گزشتہ شب بھی شکار کندھوں پہ لاد کر وہ
تھکا ہوا اپنے غار میں جب پہنچ گیا، تو
شکار کرنے کے اپنے ہتھیار
ایک کونے میں رکھ دیے ۔۔۔
مٹھیوں میں چقماق جیسے دو پتھروں کو لے کر
انہیں رگڑ کر
الاؤ اک آگ کا جلایا
کچھ ادھ پکا سا ہی گوشت کھا کر
زمیں پہ لیٹا، تو سو گیا وہ ۔۔۔
۔۔۔وہ سو گیا ، تو

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

عجیب سے انتشار میں ایک خواب دیکھا
کہ لاکھ برسوں کے بعد جیسے
کہیں فلک بوس بلڈنگوں سے
گِھری ہوئی اک سڑک کے فٹ پاتھ پر کھڑا ہے
کہ سبز بتی ملے تو وہ بھی کراس کر لے
کہ جیسے اکیسویں صدی میں وہ رہ رہا ہو
کہ جیسے کاروں، بسوں، ٹراموں
ہوا میں اڑتے ہوئے جہازوں کا شور و غل ۔۔۔
اس کا روز مرّہ کا دیکھا بھالا ہواچلن ہو

Advertisements
julia rana solicitors london

یہ اس کا ــ ماضی تھا، حال سے لاکھ سال پہلے؟
جو خواب میں لا شعور کی اجتماعی تہہ سے
ابھر کے آیا تھا ایک ڈوبے ہوئے ٗ سفینے سا ٹوٹا پھوٹا؟
کہ آنے والے دنوں کی تھی اک نئی بشارت؟
وہ غار میں رہنے والا پتھر کے جُگ کا مانس
کہاں بھلا اتنا جانتا تھا!

  • julia rana solicitors
  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com
  • julia rana solicitors london
  • merkit.pk

ستیہ پال آنند
شاعر، مصنف اور دھرتی کا سچا بیٹا

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply