فن لینڈ: وزیراعظم نے نائٹ کلب جانے پر معافی مانگ لی

ہیلسنکی: فن لینڈ کی وزیراعظم نے نائٹ کلب جانے پر قوم سے معافی مانگ لی ہے۔ 36 سالہ وزیراعظم سنا مارین نے قوم سے معافی اس لیے مانگی ہے کہ وہ کورونا سے متاثرہ شخص سے رابطے میں رہی تھیں۔

مؤقر امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے  بتایا ہے کہ وزیراعظم سنا مارین نے ملکی قوانین کی کسی بھی طرح خلاف ورزی نہیں کی لیکن اس کے باوجود معافی اس لیے مانگی ہے کہ وہ اخلاقی اعتبار سے کچھ سماجی و معاشرتی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں ناکام رہی تھیں۔

امریکی اخبار کے مطابق وزیراعظم سنا مارین کے علم میں ہفتہ کی شام یہ بات آگئی تھی کہ ان کی کابینہ کے ایک رکن کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا ہے مگر اس کے باوجود انہوں نے رات گئے تک نائٹ کلب میں پارٹی جاری رکھی بلکہ ماسک کا استعمال کیے بغیر لوگوں کے ہجوم میں بھی شامل رہیں۔

فن لینڈ کی سوشل ڈیموکریٹ وزیراعظم کی ایسی تصاویر ذرائع ابلاغ اور سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر وائرل ہوئی ہیں جن میں وہ ہیلسنکی نائٹ کلب میں ماسک کے بنا دکھائی دے رہی ہیں۔

ذرائع ابلاغ کےمطابق وزیراعظم نے ملکی قوانین کی پاسداری کرتے ہوئے کورونا سے بچاؤ کے لیے ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوا رکھی ہیں مگر انہوں نے ازخود اپنے عمل کو لاشعوری قرار دیتے ہوئے معافی مانگی ہے۔

سنا مارین نے اپنے طرز عمل پر اظہار شرمندگی کرتے ہوئے کہا ہے کہ نائٹ کلب میں ان کا رکنا غیر ذمہ دارانہ تھا۔

عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق وزیراعظم سنا مارین نے ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا ہے کہ میں نے صریحاً غلط کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ مجھے صورتحال کو زیادہ بہتر طریقے سے دیکھنا چاہیے تھا اور محتاط طرز عمل اختیار کرنا چاہیے تھے۔

Advertisements
julia rana solicitors

واضح رہے کہ فن لینڈ کے قوانین کے مطابق جن افراد نے کورونا ویکیسن کی دونوں خوراکیں لگوائی ہیں ان کے لیے قرنطینہ کرنا ضروری ہے لیکن ملکی صحت کے گائیڈ لائنز کے تحت ایسے افراد جن کا کورونا سے متاثرہ شخص سے براہ راست رابطہ ہوا ہو، وہ متاثرہ شخص کی ٹیسٹ رپورٹ آنے تک خود کو گھر تک محدود رکھیں گے۔

Facebook Comments

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply