افغانستان میں افیون کی کاشت پر پابندی لگ گئی

کابل: طالبان نے افغانستان میں افیون کی کاشت پر مکمل پابندی عائد کر دی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق طالبان کی جانب سے افیون کی کاشت پر پابندی سے منشیات کی قیمتیں بڑھنے کا اندیشہ ہے اور ہیروئن کی تیاری میں استعمال ہونے والے اس اہم خام مال کی قیمتیں آسمان پر پہنچنے کی توقع ہے۔

tripako tours pakistan

طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا تھا کہ ملک میں نئے قوانین کے تحت ہم منشیات کی تجارت کی اجازت نہیں دیں گے۔

طالبان سربراہان نے کسانوں کو پوست کی فصل کاشت کرنے سے روک دیا ہے جس کی وجہ سے افغانستان میں افیون کی قیمتیں بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق طالبان رہنماؤں نے حال ہی میں افیون کی سب سے زیادہ کاشت کرنے والے جنوبی صوبے قندھار کے کسانوں کو خبردار کیا کہ وہ صوبے میں افیون کی فصل اگانا بند کر دیں۔

قندھار، ارزگان اور ہلمند کے مقامی کسانوں کا کہنا ہے کہ پابندی کے باعث افیون کی قیمت میں تین گناہ اضافہ ہو گیا ہے اور 70 ڈالر فی کلو ملنے والی افیون اب 200 ڈالر فی کلو مل رہی ہے جبکہ اس میں مزید اضافے کا امکان ہے۔

Advertisements
merkit.pk

رپورٹ میں کہا گیا کہ مغربی حکومتوں کے مطابق دنیا بھر میں ہونے والی افیون کی غیر قانونی برآمدات میں افغانستان کا حصہ تقریباً 80 فیصد ہے۔

  • merkit.pk
  • merkit.pk

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply