• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • لاہور کے بڑے اسپتالوں میں آکسیجن کا اسٹاک ختم ہونے لگا

لاہور کے بڑے اسپتالوں میں آکسیجن کا اسٹاک ختم ہونے لگا

لاہور: لاہور کے 7 بڑے اسپتالوں میں آکسیجن کا اسٹاک صرف 16 سے 24 گھنٹے کا رہ گیا۔

نمائندے کے مطابق  لاہور کے میو، سروسز، جناح، لاہور جنرل، گنگارام، پی کے ایل آئی اور شیخ زاہد اسپتال میں 24 گھنٹے تک کا آکسیجن موجود ہے۔

tripako tours pakistan

اسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ آکسیجن پلانٹ اور بیک اپ سلنڈرز کو بھی بھروایا جارہا ہے۔

ایم ایس جنرل اسپتال کا کہنا ہے کہ مقررہ مقدار کم ہونے سے آکسیجن پریشر متاثر ہوتا ہے۔ ایم ایس جناح اسپتال کا کہنا ہے کہ ہر 18 گھنٹے کے بعد آکسیجن سپلائی کی ضرورت ہوتی ہے۔ ایم ایس میو اسپتال کا کہنا ہے کہ آکسیجن کا استعمال معمول سے 5 گناہ زیادہ ہے۔

سروسز اسپتال میں 16 گھنٹے کی آکسیجن سپلائی کا بیک اپ موجود ہے جبکہ جنرل اسپتال میں 30 گھنٹے کا بیک اپ موجود ہے۔ میو اسپتال میں 19 گھنٹے کا بیک اپ موجود ہے اور جناح اسپتال میں 17 گھنٹے کا آکسیجن بیک اپ موجود ہے۔ گنگارام اسپتال میں 30 گھنٹے کا بیک اپ موجود ہے جبکہ شیخ زاہد اسپتال میں 50 گھنٹے کی آکسیجن سپلائی کا بیک اپ موجود ہے۔

لاہور میں 80 فیصد سے زائد آئی سی یو بیڈز پر مریض داخل ہیں۔ لاہورمیں آئی سی یو بیڈز کا آکو پینسی ریٹ 87 اعشاریہ 5 صفر تک پہنچ گیا ہے۔

لاہور میں کورونا سے متاثرہ ایک ہزار 304 مریض سرکاری و نجی اسپتالوں میں زیر علاج ہیں اور زیر علاج مریضوں میں سے 262 انتہائی تشویشناک مریض وینٹی لیٹرز پر ہیں۔

673 تشویشناک مریض ہائی ڈپینڈینسی یونٹ میں زیر علاج ہیں جبکہ 369 مریضوں کو آئسولیشن وارڈز میں رکھا گیا ہے۔ لاہورمیں اب تک کورونا کے ایک لاکھ 54 ہزار196 کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں۔

Advertisements
merkit.pk

دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے اسپتالوں میں وینٹی لیٹرز اور آکسیجن بیڈز کی تعداد بڑھانے کی ہدایت کر دی ہے اور ترجمان محکمہ صحت پنجاب کے مطابق اسپتالوں میں آکسیجن کی سپلائی مسلسل جاری ہے۔

  • merkit.pk
  • merkit.pk

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply