کافی پینے سے دماغ کی ساخت تبدیل

تحقیق کے مطابق کافی کا زیادہ استعمال دماغ کی ساخت کو تبدیل کر دیتا ہے۔

ایک تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ باقاعدگی سے کیفین کی مقدار لینا دماغ میں سرمئی مادے کی مقدار کو کم کرتی ہے اور کافی کا زیادہ استعمال انفارمیشن پروسیسنگ کی صلاحیت کو ختم کر سکتا ہے۔

tripako tours pakistan

سوئس محققین نے رضاکاروں کو 10 دن کے لئے ایک دن میں 150 ملی گرام کیفین پلائی۔ جس میں کیفین کی مقدار ایک دن میں تقریبا چار یا پانچ چھوٹے کپ پیلی ہوئی کافی کے برابر تھی۔

کافی کے اتنے استعمال سے رضاکاروں کے دماغ کے سرمئی مادے میں کمی واقع ہوئی جو زیادہ تر دماغ کی بیرونی پرت یا کارٹیکس پر پائی جاتی ہے اور معلومات پر کارروائی کرنے کا کام کرتی ہے۔

تاہم تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی کہ یہ اثرات عارضی ہیں اور 10 دن تک کافی استعمال نہ کرنے سے دماغ اپنی اصلی حالت میں واپس آ جاتا ہے۔

باسل یونیورسٹی میں ڈاکٹر کیرولن ریشرٹ نے کہا ، ‘ہمارے نتائج کا لازمی طور پر یہ مطلب نہیں ہے کہ کیفین کے استعمال سے دماغ پر منفی اثر پڑتا ہے۔’

انہوں نے کہا کہ ‘لیکن روزانہ کیفین کا استعمال واضح طور پر ہمارے علمی ہارڈویئر کو متاثر کرتی ہے اور یہ امر بذات خود مزید مطالعات کو جنم دیتا ہے۔’

Advertisements
merkit.pk

محققین کے مطالعے کا مقصد شام کو کافی کے استعمال کی صورت میں نیند پر کافی کے استعمال کے اثرات کا جائزہ لینا تھا۔

  • merkit.pk
  • merkit.pk

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply