سانپ۔ سو الفاظ کی کہانی۔۔۔سیف الرحمن ادیؔب

SHOPPING
SHOPPING

مریض کے بقول اس کو سانپ نے ڈسا تھا لیکن اس کا معاملہ میری سمجھ میں نہیں آرہا تھا۔
چہرہ مکمل سرخ ہو گیا تھا، دل بری طرح زخمی تھا، کلیجہ پھٹنے کو آیا ہوا تھا اور دماغ اضطراب سے بھرا ہوا تھا۔
میں نے پوچھا: “سانپ بڑا تھا یا چھوٹا تھا؟”
اس نے کہا:
“پتہ نہیں”
“کس رنگ کا تھا؟”
“پتہ نہیں”
“کس جگہ ڈسا؟”
“پتہ نہیں”
“کچھ نہ  کچھ تو یاد ہوگا۔ کوئی علامت یا کوئی نشانی ہی بتا دو۔”
کہنے لگا: “اور تو کچھ پتہ نہیں۔
بس اتنا یاد ہے کہ وہ سانپ آستین سے نکلا تھا۔”

SHOPPING
speciaal sale

سیف الرحمن ادیؔب
سیف الرحمن ادیؔب
سیف الرحمن ادیؔب کراچی کےرہائشی ہیں۔روزنامہ”اسلام“میں انکی سوالفاظ کی کہانیاں شائع ہوتی رہتی ہیں۔فیسبک پر ان کاایک پیج ہےجس پر 200 سےزائد سو الفاظ کی کہانیاں لکھ چکے ہیں۔اس کے علاوہ ان کی سو الفاظ کی کہانیوں کا ایک مجموعہ "اُس کے نام" بھی پی ڈی ایف کی صورت میں شائع ہو چکا ہے۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *