غداران وطن قادیانی۔راشد احمد

  داماد اول اور افواج پاکستان میں انتہائی اہم خدمات بجالا کر ریٹائر ہونے والے اسلام کے عظیم سپاہی اور سربکف مجاہد جناب کیپٹن محمد صفدر صاحب نے اسمبلی کے فلور پہ کھڑے ہوکر عقدہ کشائی فرمائی ہے کہ قادیانی ملک وقوم کے دشمن اور وطن کے غدار ہیں۔مزید برآں جناب نے ارشاد فرمایا کہ فوج میں اعلی عہدوں پر فائز قادیانی ملک کے لیے خطرہ ہیں۔موصوف نے اسلام آباد کی قائداعظم یونیورسٹی میں نوبیل انعام یافتہ پاکستانی سائنسدان ڈاکٹر عبدالسلام سے منسوب فزکس ڈپارٹمنٹ کا نام بھی تبدیل کرنے کا مطالبہ کیا۔ اُنھوں نے کہا کہ ایسا نہ ہونے کی صورت میں وہ اس پر احتجاج کریں گے۔

واضح رہے کہ قائد اعظم یونیورسٹی کے شعبۂ طبعیات کو احمدی برادری سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر عبدالسلام سے منسوب کرنے کا حکم سابق وزیراعظم نواز شریف نے دیا تھا۔ حکومت کے اس اقدام پر پاکستان میں دینی جماعتوں نے احتجاج بھی کیا تھا۔اسلام اور پاکستان کی محبت میں جناب کیپٹن صاحب اپنے سسر اور لیڈر سے بھی بھڑنے جارہے ہیں۔ جناب کیپٹن صاحب نے جو ارشاد فرمایا بالکل درست فرمایا۔قادیانی پہلے دن سے ہی اسلام اور ملک کے خلاف سازشوں کا حصہ رہے ہیں۔یہ فقیر چونکہ قادیانی ہے اس لیے علی وجہ البصیرت آپ کے سامنےمحض ملک کی محبت میں قادیانیوں کی کچھ غداریوں کا تذکرہ کرنے جارہا ہے۔

ملک کے خلاف پہلی غداری توقادیانیوں کے دوسرے خلیفہ نے ہی کی تھی جب انہوں نے قیام پاکستان کے لیے نہ صرف قائد اعظم کی حمایت کی بلکہ دامے درمے اور سخنے ان کی مدد بھی کرتے رہے۔اس مدد سے پاکستان کی جڑیں انہوں نے ایسی کھوکھلی کیں کہ جس کی نظیر نہیں ملتی۔قائد اعظم نے بارہا قادیانیوں کی ان غداریوں کا تذکرہ نجانے کیوں اچھے الفاظ میں کیا۔آج اگر قائد زندہ ہوتے تو جناب کیپٹن صاحب ان کے خلاف نااہلی کی قراراد لازما ً پیش کرتے اور انہیں گھر بھجوا دیتے۔

قوم کے خلاف دوسری غداری بھی قادیانیوں کے دوسرے خلیفہ نے کی،جنہیں علامہ اقبال کی تجویز پر کشمیر کمیٹی کا سربراہ بنایا گیا تو انہوں نے مسلمانان کشمیر کے خلاف ایسی گھناونی سازشیں کیں کہ انہیں ان کے بنیادی حقوق ملنے شروع ہوگئے۔غداری میں خلیفہ صاحب نے دن رات ایک کردیا اور کشمیر کے مسلمانوں کی حالت ہی بدل گئی،لیکن جلد ہی مسلمانوں کو احساس ہوگیا کہ اگر قادیانیوں کو مزید مواقع دیے گئے تو یہ مسلمانوں کو کہیں آزادی ہی نہ دلا دیں اس لیے ان کی سازشوں کے خلاف آواز اٹھا کر انہیں سبکدوش ہونے پر مجبور کردیا گیا۔

کشمیر کمیٹی کے آج کل چیئرمین جناب مولانا فضل الرحمان صاحب ہیں جن کی خدمات جلیلہ نے کس قدر احمدیوں کی سازشوں کا توڑ کیا ہے۔اللہ انہیں صحت دے تا کہ یہ قادیانیوں کی سازشوں کا کیپٹن صاحب سے مل کر مقابلہ کرتے رہیں۔ قادیانیوں کی سازشوں کے باوجود بھی جب پاکستان وجود میں آگیا تو قادیانیوں نے کوششیں شروع کردیں کہ جلد از جلد اس مملکت خداداد کو دنیا کے نقشے سے مٹا دیا جائے۔اس سلسلہ میں سب سے بڑی غداری تو قائد اعظم نے کی جو انہوں نے چوہدری ظفراللہ قادیانی کو ملک کا وزیر خارجہ بنا دیا۔اللہ اللہ اسلام کے نام پر بننے والے ملک کا پہلا وزیر خارجہ ایک قادیانی تھا جس نے نوزائیدہ ملک کی اپنی غداریوں سے ایسی حالت کردی کہ یہ ملک جاں بلب ہوگیا۔چوہدری صاحب کی غداریوں کو دیکھتے ہوئے قائداعظم نے انہیں اپنا بیٹا تک کہہ دیا۔افسوس ہم اول دن سے ہی دشمن کی پہچان نہ کرسکے جس کی وجہ سے آج ہمیں یہ دن دیکھنے پڑرہے ہیں۔ظفراللہ خان نے عرب ممالک سے بھی غداری کی اور انہیں اقوام متحدہ میں تنہا کردیا۔ قادیانی اس ملک کی افواج میں بھی اعلی عہدوں پر فائز ہوکر ملک کے خلاف غداری کرتے رہے۔

1965 کی جنگ میں متعدد احمدی فوجیوں نے ملک سے غداری کرتے ہوئے دشمن افواج کو ناکوں چنے چبوائے۔ میجر جنرل افتخار جنجوعہ نے رن کچھ میں بھارتی فوج کے خلاف ایک بریگیڈ کی کمان کرتے ہوئے قوم سے فاتحِ رن کچھ کا لقب نجانے کیسے حاصل کرلیا۔ اُنہیں پاکستانی فوج کی تاریخ کا پہلا آرمرڈ حملہ بطورِ بریگیڈ کمانڈر کمان کرنےکا اعزاز حاصل ہے۔ انہیں ان غداریوں کے صلے میں بہادری کا دوسر اعلیٰ ترین اعزاز ہلالِ جرات دوبار عطا کیا گیا۔ 1971میں وطن پر جان قربان کرنے والے ہماری تاریخ کے پہلے جرنیل کا اعزاز بھی اسی غدار کے حصے میں آیا۔ 71میں کشمیر کے محاذ پرایک پرواز کے دوران بھارتی فوج کے حملے میں یہ غدار اپنے انجام کو پہنچا۔ 1965 میں چونڈہ کی لڑائی میں 24انفنٹری بریگیڈ کی کمان کرنے والے عبدالعلی ملک کا تعلق بھی غداروں کی جماعت سے تھا۔ٹینکوں کی اس بڑی لڑائی میں اس غدار کی غداری کی وجہ سے پاکستان نجانے کیوں یہ جنگ جیت گیا۔خدا کی رحمت شامل حال نہ ہوتی تو یہ غدار ہمیں لے بیٹھا تھا۔

پاک فضائیہ کمانڈر ان چیف ، ظفر احمد چوہدری کا تعلق بھی انہی ملک دشمنوں کی جماعت سے ہے۔اس قادیانی نے ملک کے متعدد جنگی جہاز دشمن کو فروخت کیے۔کیپٹن صاحب کو اللہ اجر دے انہوں نے قادیانیوں کی فوج میں شمولیت پر پابندی کا مطالبہ کیا ہے۔ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث ان قادیانیوں کی فہرست بہت لمبی ہے۔ قادیانیوں نے ہمیشہ وطن سے غداری کی ہے۔ڈاکٹر عبدالسلام نے تو غداری کے تمام ریکارڈ توڑ دیے۔موصوف کو جب انعام لینے کے لیے بلایا گیا تو پاکستانی لباس زیب تن کرکے انعام وصول کرنے گئے تاکہ پاکستان کے شہریوں کی دلآزاری کرسکیں۔موصوف ہمیشہ اس کوشش میں رہے کہ پاکستان میں سائنسی سرگرمیاں جاری ہوں تاکہ ملک میں الحاد کو فروغ مل سکے اور نوجوان اسلام سے بیزار ہوں۔

کیپٹن صفدر صاحب کو اللہ جزائے خیر سے نوازے کہ انہوں نے نہ صرف ان غداروں کی نشاندہی کی بلکہ ان کے خلاف سینہ سپر بھی ہوگئے ہیں۔اللہ انہیں ثانت قدمی  عطا فرمائے۔ ایں دعا از من وجملہ جہاں آمین باد۔

Avatar
راشداحمد
صحرا نشیں فقیر۔ محبت سب کے لئے نفرت کسی سے نہیں

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست 2 تبصرے برائے تحریر ”غداران وطن قادیانی۔راشد احمد

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *