محسن داوڑ متوجہ ہو(قسط1)۔۔عارف خٹک

اگر آپ  آنجناب کم از کم نیچے دیئے گئے سوال نمبر پانچ پر غور فرمائیں اور اپنی قوم کو ہوسکے تو جواب دیکر ان کو مشکور فرمائیں۔
آپ کو یاد ہوگا کہ حالیہ دنوں میں محکمہ صحت میرانشاہ میں پاکستان کی بدترین کرپشن ہوئی ہے۔ ملازمت کا جھانسا دیکر جو رقوم بلواسطہ طور آپ لے چکے ہیں ان کیلئے متاثرہ نوجوانوں کی ویڈیو کانفرنس میں باقاعدہ آپ کا نام موجود ہے۔ مزید تصدیق کیلئے میں نے اپنے ذرائع سے متاثرہ نوجوان امتیاز داوڑ کے والد سے بات کی تو انہوں نے کہا کہ مذکورہ ملازمتوں میں ساٹھ فیصد امیدواروں سے محسن داوڑ کے چچا عاصم اور چچا غیور، محسن کے دوست جمال داوڑ، ہاشم ہرمز، سید انور ہمزونی، سید اسد حسن داوڑ اور دوسروں نے آپ کا کہہ کر ان امیدواروں فی کس ملازمت کیلئے لاکھوں روپے رقوم لیں۔ جو باقاعدہ اسٹامپ پیپر پر انگوٹھا لگا کر یہ رقوم ان سے وصول کی گئیں۔ آپ سے فقط پوچھنا یہ تھا کہ اپ کے قریبی رفقاء اور رشتہ داروں نے پیسے لیکر مذکورہ نوجوانوں کو بھرتی کروایا۔ جن کے ثبوت آپ کو پیش کئے گئے مگر آپ نے اس کرپشن پر اپنا کیا موقف اختیار کیا ہے؟۔
متاثرہ نوجوان امتیاز داوڑ کے والد کا مزید یہ بھی کہنا ہے کہ “ہم محسن کے پاس گئے کہ ہمارے بچوں کے ساتھ زیادتی ہوئی تو انھوں نے نخوت سے کہا آپ لوگ عدالت چلے جائیں۔ ہم نے محسن کو وہ سارے ثبوت دیکھائے کہ آپ کے دوستوں بالخصوص ہاشم ہرمز اور سید اسد حسن داوڑ کے تو اشٹام پیپرز موجود ہیں جنہوں نے امیدواروں کو بھرتی سے قبل پیسوں کیلئے غیر اہل لڑکوں کے ساتھ معاہدہ سائن کیا ہے۔ مگر محسن نے وہ بھی دیکھنا گوارا نہیں کیا اور فقط اتنا کہا آپ لوگ عدالت چلے جاؤ”۔


محترم ایم این اے صاب اب آپ بتائیں کہ آپ کے حلقہ کے متاثرہ لوگ جائیں تو کہاں جائیں۔ کیا یہ آپ کا حلقہ نہیں؟۔ پاکستان کی عدالتوں کا آپ بھی معلوم ہیں جہاں درجنوں بیگناہوں کو فوج سے شہید کروا کر آپ آج بھی مظلومیت کے وکٹری اسٹینڈ پر کھڑے ہیں۔
مجھے آپ کے کرپشن سے کوئی لینا دینا نہیں ہے نہ میں نے وزیرستان کا ٹھیکہ لے رکھا ہے میرے کرک میں اس سے بڑے بڑے کرپشن اسکینڈلز موجود ہیں مگر پشتون تحفظ موومنٹ جو پشتونوں کی واحد جماعت ہے۔ بتانے کا مقصد فقط یہی تھا کہ آپ کا کردار ہر لحاظ سے مشکوک ہوچکا ہے۔
کیا منظور پشتین آپ کو مزید بطور رہنماء اس تنظیم میں برداشت کرسکیں گے؟۔ اگر آپ کا یا آپ کے حمایتیوں کا جواب “ہاں” ہے تو مجھے کہنے دیجئے کہ پشتونوں کی مزید بربادی کے ذمہ دار صرف آپ ہوں گے۔
جاری ہے

عارف خٹک
عارف خٹک
بے باک مگر باحیا لکھاری، لالہ عارف خٹک

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست ایک تبصرہ برائے تحریر ”محسن داوڑ متوجہ ہو(قسط1)۔۔عارف خٹک

  1. عارف خٹک صاحب،
    آپ خوب جانتے ہے کہ محسن داوڑ کسی کو بھی نوکری نہیں دے سکتے۔آپ صرف انداز بیان سے اس کے د امن پر کیچڑ اچھالنے کی ناکام کوشش کررہے ہیں۔جبکہ ایک صحافی ہونے کے ناطے آپ پر بار ثبوت بھی آتا ہے جوآپ کے پاس نہیں ہے اسلیے اپنی واھیات تحریر سے آپ لوگوں کو گمراہ نہ کرے۔
    آپ کو ایک سال پہلے بھی کمنٹ میں بولا ہے اب پھر کہہ رہا ہوں۔منڈوا،ورانہ،بوبل خیل اور گڈی خیل کے مدارس کو چیک کر واۓ ۔یہاں سے اور لکی مروت کے سیف ہاؤسز سے وزیرستان کیلیے ٹارگٹ کلرز کو لے جایا جاتا ہے اور پھر مشن پورا ہونے پر واپس لے آیا جاتا ہے۔آپ اگر واقعی اپنے علاقے کے خیرحواہ ہے تو اس ایشو پر تحقیقات کرے۔مزید
    معلومات کیلیے رابطہ کرسکتے ہے۔

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *